:: الوقت ::

ہمارا انتخاب

خبر

زیادہ دیکھی جانے والی خبریں

ڈاکومینٹس

صیہونی حکومت

صیہونی حکومت

صیہونی حکومت اپنے زوال کے سفر پر تیزی سے رواں دواں ہے اور ہرآنے والا دن اس غاصب اور غیر قانونی حکومت کو سیاسی تنہائیوں کی طرف دھکیل رہا ہے
اسلامی تحریکیں

اسلامی تحریکیں

ماضی اور حال کی اسلامی تحریکوں کا اگر گہرائی سے جائزہ لیا جائے تو یہ بات واضح ہوتی ہے کہ جہاں قیادت بابصیرت اور اپنے اھداف میں مخلص تھی وہاں کامیابیاں نصیب ہوئیں اور قربانیاں رنگ لائیں اور جہاں قیادت ۔۔
وهابیت

وهابیت

برطانوی سامراج کا لگایا یہ درخت ایک شجر سایہ دار میں تبدیل ہوکر طالبان،داعش،النصرہ۔الشباب اور بوکوحرام کی صورت میں اسلام اور مسلمانوں کو کھوکھلا کرنے میں پیش پیش ہے ۔
طالبان

طالبان

اسلام اور افغانستان کی آذادی کے نام پر وجود میں آنے والا یہ گروہ پاکستان اور افغانستان کے لئے ایک ایسے ناسور میں بدل گیا ہے جو نہ صرف اسلام کو بدنام کرنے میں پیش پیش ہے بلکہ اس کے وجود سے خطے کی اسلامی قوتوں کو بھی شدید نقصان
استقامتی محاز

استقامتی محاز

حزب اللہ کے جانثاروں نے اپنی لہو رنگ جد و جہد سے غاصب صیہونی حکومت کو ایسی شکست دی ہے جس سے خطے میں طاقت کا توازن مکمل طور پر تبدیل ہوتا نظر آرہا ہے اور استقامتی اور مقاومتی محاز
یمن

یمن

یمن کیجمہوری تحریک نے آل سعود سمیت خطوں کی دیگر بادشاہتوں کو نئے چیلنجوں سے دوچار کردیا ہے۔سعودی جارحیت آل سعود کے لئے ایک دلدل ثابت ہوگی۔
پاکستان

پاکستان

امریکی مداخلتوں کا شکار یہ ملک آج اس مرحلہ پر پہنچ گیا ہے کہ امریکہ کے علاوہ خطے کے بعض عرب ممالک بھی اسے اپنا مطیع و فرماندار بنانا چاہتے ہیں
داعش

داعش

سی آئی اے اور موساد کی مشترکہ کوششوں سے لگایا گیا یہ پودا جسے آل سعود کے خزانوں سے پالا پوساگیا اب عالم اسلام کے ساتھ ساتھ اپنے بنانے والوں کے لئے بھی خطرہ۔۔۔۔
alwaght.com
رپورٹ

کیا امریکا تیسری عالمی جنگ چاہتا ہے؟

Friday 8 July 2016
کیا امریکا تیسری عالمی جنگ چاہتا ہے؟

الوقت - شمالی کوریا نے اعلان کیا ہے کہ ملک کے رہنماء کم جونگ اون پر امریکہ کی جانب سے عائد پابندی جنگ کی طرح ہے۔
فرانس پریس کے مطابق شمالی کوریا کی وزارت خارجہ نے اعلان کیا ہے کہ امریکہ کی جانب سے ملک کے رہنما کم جونگ اون پرعائد کی گئی مخاصمانہ پابندی جنگ کی طرح ہے اور یہ ہمیں اپنے دشمن سے مقابلے کی اجازت دیتی ہے۔
انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے الزام میں امریکہ نے بدھ کو شمالی کوریا کے رہنما پر پابندی عائد کر دی تھی۔ امریکی وزارت خزانہ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق شمالی کوریا میں ہو رہے انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے لئے کم جونگ اون براہ راست ذمہ دار ہیں۔
امریکہ نے شمالی کوریا کے رہنما کے علاوہ اس ملک کے مزید دس حکام کو بھی بلیک لسٹ کیا ہے۔

 

شمالی کوریا کے رہنما اور دس دیگر عہدیداروں کے خلاف کی گئی کارروائی کا مطلب یہ ہے کہ اب امریکہ میں اگر ان لوگوں کے کوئی ذاتی اثاثے ہیں تو ضبط کر لئے جائیں گے۔ وہ کسی امریکی شہری یا ادارے کے ساتھ تجارت نہیں کر پائیں گے۔
ان پابندیوں پر شمالی کوریا نے اپنے پہلے رد عمل میں امریکہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اپنے اس فیصلے فوری نظر ثانی کرے۔ پيونگ يانگ نے خبردار کیا ہے کہ اگر اس بارے میں امریکہ کی جانب سے فوری ر کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا تو تمام سفارتی ذرائع کو بند کر دیا جائے گا۔
شمالی کوریا کے بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکہ، شمالی کوریا کے رہنما کے خلاف اس قسم کے مخاصمانہ اقدام کرکے اپنے لئے بحران کھڑا کر رہا ہے جو اس کے مفاد میں نہیں ہوگا۔

 

ادھر روس اور چین نے کھل کر امریکا کو دھمکی دے دی ہے۔ یہ دونوں امریکا سے ناراض ہیں کیونکہ امریکا نے جنوبی کوریا میں اپنا اینٹی میزائل سسٹم تعینات کرنے کا اعلان کیا ہے، یہ دونوں اس لئے بھی ناراض ہیں کیونکہ امریکا نے شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ پر پابندی عائد کر دی ہے۔ روس نے تو براہ راست کہہ دیا ہے کہ امریکا کو ایسا خمیازہ بھگتنا پڑے گا جس کی کوئی تلافی نہیں ہو گی۔ باخبر ذرائع اس کو جوہری جنگ کی دھمکی کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔
وہیں چین نے بھی کہہ دیا ہے کہ امریکا کا یہ قدم نئے آتش فشاں جلا سکتا ہے۔ اس سے پہلے کبھی روس اور چین نے یوں ایک ساتھ امریکہ کو گھیرنے کی کوشش نہیں کی ہے۔ تو کیا یہ کشیدگی ایک جنگ عظیم کی شکل اختیار کر سکتی ہے۔  امریکا کے دو فیصلوں نے تین سپرپاور ممالک کے درمیان جنگ جیسے حالات پیدا کر دیے ہیں، یہ وہ ملک ہیں جن کے پاس مجموعی طور پر 15 ہزار سے زیادہ ایٹم بم ہیں۔
 س کے بعد امریکا نے شمالی کوریا کو ڈرانے کے لئے اس سے لگی جنوبی کوریا کی سرحد پر اپنا جدید اینٹی میزائل سسٹم THAAD تعینات کرنے کا بڑا اعلان کر دیا۔ ظاہر ہے ان اقدامات نے جزیرہ کوریا میں امریکا پر لگام لگانے کے لئے روس اور چین کو متحد کر دیا اور روس نے دوٹوک الفاظ میں کہا کہ گویا تیسری جنگ عظیم کی براہ راست دھمکی ہی ہو۔

 


امریکہ اپنے اتحادیوں کے ساتھ ایشیا بحرالکاہل علاقے میں اینٹی میزائل سسٹم نصب کر رہا ہے۔ یہ نظام اس پورے علاقے کا اسٹریٹجک توازن خراب کر دے گا اور اس کا ایسا نتیجہ بھگتنا پڑے گا جس کی تلافی ممکن نہیں ہے۔  روس انتہائی ناراض ہے وہ پہلے بھی کہتا رہا ہے کہ امریکا جزیرہ کوریا کے علاقے میں اپنی فوج اور اپنی میزائل کی تعیناتی کر دراصل روس کو دباؤ میں لینے کی کوشش میں ہے۔ روس دراصل نیٹو ممالک کی فوج کی روسی سرحد کے قریب موجودگی سے بھی ناراض ہے۔

 

ٹیگ :

جنوبی کوریا شمالی کوریا امریکا چین میزائل کشیدگی

نظریات
نام :
ایمیل آئی ڈی :
* ٹیکس :
سینڈ

Gallery

تصویر

فلم

شیخ عیسی قاسم کی حمایت میں مظاہرے، کیمرے کی نظر سے

شیخ عیسی قاسم کی حمایت میں مظاہرے، کیمرے کی نظر سے