:: الوقت ::

ہمارا انتخاب

خبر

زیادہ دیکھی جانے والی خبریں

ڈاکومینٹس

صیہونی حکومت

صیہونی حکومت

صیہونی حکومت اپنے زوال کے سفر پر تیزی سے رواں دواں ہے اور ہرآنے والا دن اس غاصب اور غیر قانونی حکومت کو سیاسی تنہائیوں کی طرف دھکیل رہا ہے
اسلامی تحریکیں

اسلامی تحریکیں

ماضی اور حال کی اسلامی تحریکوں کا اگر گہرائی سے جائزہ لیا جائے تو یہ بات واضح ہوتی ہے کہ جہاں قیادت بابصیرت اور اپنے اھداف میں مخلص تھی وہاں کامیابیاں نصیب ہوئیں اور قربانیاں رنگ لائیں اور جہاں قیادت ۔۔
وهابیت

وهابیت

برطانوی سامراج کا لگایا یہ درخت ایک شجر سایہ دار میں تبدیل ہوکر طالبان،داعش،النصرہ۔الشباب اور بوکوحرام کی صورت میں اسلام اور مسلمانوں کو کھوکھلا کرنے میں پیش پیش ہے ۔
طالبان

طالبان

اسلام اور افغانستان کی آذادی کے نام پر وجود میں آنے والا یہ گروہ پاکستان اور افغانستان کے لئے ایک ایسے ناسور میں بدل گیا ہے جو نہ صرف اسلام کو بدنام کرنے میں پیش پیش ہے بلکہ اس کے وجود سے خطے کی اسلامی قوتوں کو بھی شدید نقصان
استقامتی محاز

استقامتی محاز

حزب اللہ کے جانثاروں نے اپنی لہو رنگ جد و جہد سے غاصب صیہونی حکومت کو ایسی شکست دی ہے جس سے خطے میں طاقت کا توازن مکمل طور پر تبدیل ہوتا نظر آرہا ہے اور استقامتی اور مقاومتی محاز
یمن

یمن

یمن کیجمہوری تحریک نے آل سعود سمیت خطوں کی دیگر بادشاہتوں کو نئے چیلنجوں سے دوچار کردیا ہے۔سعودی جارحیت آل سعود کے لئے ایک دلدل ثابت ہوگی۔
پاکستان

پاکستان

امریکی مداخلتوں کا شکار یہ ملک آج اس مرحلہ پر پہنچ گیا ہے کہ امریکہ کے علاوہ خطے کے بعض عرب ممالک بھی اسے اپنا مطیع و فرماندار بنانا چاہتے ہیں
داعش

داعش

سی آئی اے اور موساد کی مشترکہ کوششوں سے لگایا گیا یہ پودا جسے آل سعود کے خزانوں سے پالا پوساگیا اب عالم اسلام کے ساتھ ساتھ اپنے بنانے والوں کے لئے بھی خطرہ۔۔۔۔
alwaght.com
تجزیہ

روہنگیا مسلمانوں کے پاس ترک وطن کےعلاوہ کوئی چارہ نہیں

Monday 18 May 2015
روہنگیا مسلمانوں کے پاس ترک وطن کےعلاوہ کوئی چارہ نہیں

الوقت- سنہ دو ہزار نو سے روہنگیا مسلمانوں پر انتہاپسند بوڈھسٹوں کے حملے جاری ہیں اور میانمار کی بظاہر غیر فوجی حکومت بھی ان انتہاپسند بودھسٹوں کے ساتھ کھڑی ہے- میانمار میں موجود مختلف اقوام، نسلوں اور مذاہب کے لوگوں میں سے صرف روہنگیا مسلمان ہی تشدد کا شکار ہیں-  میانمار کے مسلمان اپنے ملکی حالات تنگ آکر دوسرے ممالک کی طرف ہجرت کررہے ہیں۔میانمار سے فرار ہو کر انسانی اسمگلروں کے چنگل میں پھنسنے والے اور جنوب مشرقی ایشیا کے علاقے کے سمندر میں سرگرداں ہزاروں روہنگیائی مسلمانوں کے حالات، گزشتہ چند روز کے دوران اس علاقے کے ایک اہم مسئلے میں تبدیل ہو چکے ہیں- ان میں سے دسیوں آوارہ وطن افراد بھوک یا بیماری کی وجہ سے اپنی جانوں سے ہاتھ دھو چکے ہیں اور ان کی لاشیں سمندر کے حوالے کر دی گئی ہیں- جبکہ سینکڑوں روہنگیائی آوارہ وطنوں کو انسانی اسمگلروں نے غیرآباد جزیروں پر بےیارومدد گار چھوڑ دیا ہے- اب تک تقریبا تین ہزار آوارہ وطن چند کشتیوں کے ذریعے ملایشیا، انڈونیشیا اور تھائی لینڈ کی سمندری حدود میں داخل ہوئے ہیں- ان میں سے بعض افراد کو ملایشیا اور انڈونیشیا میں کیمپوں کے اندر کڑی نگرانی میں رکھا گیا ہے- بتایا جاتا ہے کہ صحافیوں کو ان کیمپوں میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے۔ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے انتہا پسند بدھسٹوں کے ظلم و ستم کی وجہ سے ہزاروں روہنگیائی مسلمانوں کی صورت حال پر تشویش ظاہرکی ہے- ایک طویل خاموشی کے بعد اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے میانمار کے انتہا پسند بدھسٹوں کے ظلم و ستم اور حملوں کے بعد اپنا گھر بار اور ملک چھوڑ کر جنوبی مشرقی ایشیا کے سمندر میں سرگرداں ہزاروں روہنگیائی مسلمانوں کی صورت حال پر تشویش کا اظہار کیا ہے- اس سلسلے میں ملایشیا کے وزیراعظم نجیب رزاق نے بھی نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل بان کی مون نے اتوار کے روز ان کے ساتھ ٹیلی فون پر رابطہ کر کے روہنگیائی مسلمانوں کی صورت حال پر تشویش ظاہر کی ہے- ادھر میانمار کے فوجی حکمرانوں نے اپنی داخلہ اور خارجہ پالیسیاں بدل دی ہیں اور اب ان کا رجحان یورپ اور امریکہ کی جانب ہو گيا ہے- یہی وجہ ہے کہ اب ان کو یورپی حکومتوں کی تنقیدوں کا بہت کم سامنا کرنا پڑتا ہے اور یورپی حکومتیں میانمار میں مسلمانوں کے حقوق کی وسیع پیمانے پر کی جانے والی خلاف ورزی کو بھی نظر انداز کر دیتی ہیں- انتھا پسند بودھوں کے ہاتھوں سیکڑوں مسلمانوں کے قتل عام کے بعد دسیوں ہزار روہنگيا مسلمان دوسرے ملکوں میں پناہ لینے پر مجبور ہوگئے۔ روہنگيا مہاجرین کو دوسرے ملکوں میں پناہ لینے میں بڑی مشکلیں اٹھانی پڑتی ہیں۔ ادھر گذشتہ ہفتے تھائي لینڈ کے جنوبی علاقے میں ایک اجتماعی قبر کی دریافت کے بعد ان مسلمانوں کی مظلومیت اور کسمپرسی کے نئے پہلو سامنے آئے ہیں۔ تھائي لینڈ میں دریافت ہونے والی اجتماعی قبر سے بنگلادیشی اور روہنگيا مسلمانوں کی لاشیں برآمد ہوئي ہیں۔ واضح رہے انسانی اسمگلروں کی قید سے رہا ہونے والے روہنگيا افراد نے کہا ہے کہ اگر یہ قیدی تاوان ادا نہیں کرپاتے ہیں تو انہيں جنگلوں میں گولی ماردی جاتی ہے۔ واضح رہے آراکان روہنگيا فیڈریشن کے سربراہ نے کہا ہےکہ انتھاپسند بودھوں کے ہاتھوں روہنگيا مسلمانوں کے قتل عام ، ان کے گھروں کو نذر آتش کرنے نیز میانمار حکومت کے دباؤ کی وجہ سے روہنگيا مسلمانوں کے پاس ترک وطن کےعلاوہ کوئي چارہ نہیں رہ گیا ہے۔ انہوں نے کہا یہ روشیں روہنگيا مسلمانوں کو زور زبردستی ترک وطن پر مجبور کررہی ہیں۔

قابل غور نکتہ یہ ہے کہ اسلام اور حرمین شریفین کی حفاظت کے بہانے مسلمانوں کا قتل عام کرنے والے عرب حکمران بےچارے یمنیوں کو اپنے زیر تسلط لانے کے شیطانی منصوبے پر عمل درآمد کے لئے تو اربوں ڈالر خرچ کررہے ہین لیکن وہ ان آوارہ وطن روہنگیائی مسلمانوں کے لئے ایک لفظ بھی ادا کرنے کے لئے تیار نہیں ہیں دوسری طرف مسلمان ممالک کی تنظیم او آئی سی بھی مکمل چپ سادھے ہوئے ہے۔کیا مسلمان ممالک میں کوئی تنظیم یا ادارہ ان مظلوموں کے لئے عملی قدم اٹھانے کے لئے تیار نہیں ہے۔

 

ٹیگ :

نظریات
نام :
ایمیل آئی ڈی :
* ٹیکس :
سینڈ

Gallery

تصویر

فلم

شیخ عیسی قاسم کی حمایت میں مظاہرے، کیمرے کی نظر سے

شیخ عیسی قاسم کی حمایت میں مظاہرے، کیمرے کی نظر سے